مرجع عالی قدردام ظلہ الوارف کی خدمت میں ڈنمارک کےعراق میں سفیر کچھ عالمی طاقتیں اپنےشیطانی اہداف کےحصول کےلئے جوانوں میں الحاد کوپھیلا رہی ہیں

مرجع عالی قدردام ظلہ الوارف کی خدمت میں ڈنمارک کےعراق میں سفیر کچھ عالمی طاقتیں اپنےشیطانی اہداف کےحصول کےلئے جوانوں میں الحاد کوپھیلا رہی ہیں



23/4/2021


مرجع مسلمین وجہانِ تشیع حضرت آیۃ اللہ العظمیٰ الحاج حافظ بشیر حسین نجفی دام ظلہ الوارف نےمرکزی دفترنجف اشرف میں ملاقات کو آئےڈنمارک کےسفیراسٹیگ پاولوپیرس سےمخاطب ہوتےہوئے  فرمایا کہ بہتری کی جانب عراق کو لےجانے کےلئےضروری ہےکہ  بےروزگارجوانوں  کو روزی فراہم کرنےکےلئےجدید منصوبوں کو عملی  شکل  دی جائے انہوں اسی ضمن میں ڈنمارک کی حکومت کو عراق سےتعاون کی نصیحت کرتےہوئےفرمایا کہ جوانوں کو روزگار  ملنےسےبےروزگاری میں کمی آئےگی اوراگر ڈنمارک اس شعبےمیں  عراق کےساتھ تعاون کرتا ہے تو اس سےدونوں ملکوں کوفائدہ  پہنچےگا۔مرجع عالی قدر دام ظلہ الوارف نےفرمایا کہ سیاسی اور عسکری شعبوں سےاقتصادی شعبہ مہم اورمؤثرہے۔
مرجع عالی قدردام ظلہ الوارف نےفرمایا کہ کرسیوں،مناصب اورعہدوں  پر بیٹھے افراد کو اگر اسکا احساس ہوتا کہ انکی ذمہ داری عوام کی خدمت ہےتویقیناعوام خوشحالی کی زندگی  بسرکررہی ہوتی اور وہی عوام ان کے شانہ بشانہ کھڑی ہوتی۔
مرجع عالی  قدر دام ظلہ  الوارف نے دوران گفتگو حکومت ِحضرت امام علی علیہ السلام کا تذکرہ کرتےہوئےفرمایا کہ حضرت امام علی  علیہ السلام کی وہ حکومت تھی کہ جس نےحقیقی عدالت کومتعارف کروایا اورلوگوں کے امورکی دیکھ بھال کی،امام علیہ السلام نےخود ایک سوکھی جوکی روٹی  پراکتفا کیا جبکہ انکی حکومت اسلامیہ کی حدود کرہ ارضی کےچاروں طرف کئی ممالک پرمحیط تھیں،حضرت  امام علی علیہ السلام نےہی یہ فرمایا تھا ( وَ لَوْ شِئْتُ لَاهْتَدَیْتُ الطَّرِیْقَ اِلٰى مُصَفّٰى هٰذَا الْعَسَلِ، وَ لُبَابِ هٰذَا الْقَمْحِ، وَ نَسَاۗئِجِ هٰذَا الْقَزِّ ،وَ لٰكِنْ هَیْهَاتَ اَنْ‏ یَّغْلِبَنِیْ هَوَایَ، وَ یَقُوْدَنِیْ جَشَعِیْۤ اِلٰى تَخَیُّرِ الْاَطْعِمَةِ، وَ لَعَلَّ بِالْحِجَازِ اَوِ الْیَمَامَةِ مَنْ لَّا طَمَعَ لَهٗ فِی الْقُرْصِ، وَ لَا عَهْدَ لَهٗ بِالشِّبَعِ، اَوْ اَبِیْتَ مِبْطَانًا وَّ حَوْلِیْ بُطُوْنٌ غَرْثٰى، وَ اَكْبَادٌ حَرّٰى، اگر میں چاہتا تو صاف ستھرے شہد، عمدہ گیہوں اور ریشم کے بنے ہوئے کپڑوں کیلئے ذرائع مہیا کر سکتا تھا۔ لیکن ایسا کہاں ہو سکتا ہے کہ خواہشیں مجھے مغلوب بنالیں اور حرص مجھے اچھے اچھے کھانوں کے چن لینے کی دعوت دے، جبکہ حجاز و یمامہ میں شاید ایسے لوگ ہوں جنہیں ایک روٹی کے ملنے کی بھی آس نہ ہو اور انہیں پیٹ بھر کر کھانا کبھی نصیب نہ ہوا ہو۔ کیا میں شکم سیر ہو کر پڑا رہا کروں، درآنحالانکہ میرے گرد و پیش بھوکے پیٹ اور پیاسے جگر تڑپتے ہوں )
دین کا سیاست سےربط پرمرجع عالی قدردام ظلہ الوارف نے فرمایا کہ   صحیح وسلیم سیاست دین کی روشنی میں ملک اورفرد کوصحیح و سلیم طریقےسےچلانا ہےدین اجتماعی، اداری اورحکومی امورسے  معزول نہیں ہے،حضرت امیرالمؤمنین علی بن ابیطالب علیھما السلام  ہی تھےکہ جنہوں نےکفالت کےنظام اوربےروزگارافراد کی سرپرستی  کےنظام کی بنیاد ڈالی،اسلام ہی وہ دین ہےکہ جس نےفقروفاقےاور غربت سےجنگ لڑی ہےیہاں تک کہ حضرت  رسول خدا ؐ نےفقیری  سےہوشیاروخبردارکرتے ہوئےفرمایا تھا( كَادَ الفَقْرُ أَنْ يَكُونَ كُفْرَاً  غریبی اور ناداری انسان کوکفر کےقریب لے جاتی ہے)۔   
مرجع عالی قدردام ظلہ الوارف نےفرمایا کہ کچھ عالمی طاقتیں اپنے  شیطانی اہداف کےحصول کےلئےجوانوں میں الحاد کو پھیلا رہی ہیں   جبکہ فتنوں کی اصل جڑ پوری دنیا میں یہی الحادہےاس لئےکہ یہ الحاد کسی بھی  دینی نظام کونہیں مانتا،جبکہ دین ہی ہے کہ جوانسان کو کسی دوسرے کےحقوق اوراس پرزیادتی سےروکتا ہے۔
دہشت گرد اوردہشت گردی کےحوالےسےمرجع عالیقدردام ظلہ الوارف  نےفرمایا کہ(بعض طاقتوں نےانہیں بنایاہےاور وہی طاقتیں ان دہشت  گردوں کی مدد سے دوسرےممالک،دوسرےسیاسی  نظام  اوردوسرے  ملکوں کی عوام کو نشانہ بناتے ہیں۔ انہیں دہشت گردوں کا سیاسی  اہداف کےلئے دین کےچولے تلےاستعمال کیا اور دین کےلیبل کو استعمال کرکےاپنےسیاسی اہداف کےحصول کےلئےہرممکنہ کاوشیں کی گئیں ساتھ ساتھ عام لوگوں اور دوسرے معاشرے کے نزدیک دین کی صورت بگاڑنےکی کوشش کی گئی۔
مرجع عالی قدردام ظلہ الوارف نےمزید فرمایا کہ حقیقی اسلام محمدی  اوران دہشت گردوں کےبناؤٹی اسلام اوراسی طرح تابعین کےذریعہ  جواسلام پہنچا اوراہلبیت علیھم السلام کےذریعہ جواسلام پہنچا ان سب کےدرمیان فرق سمجھنےاورحقیقی اسلام محمدی کی معرفت کےلئے  لازمی ہے کہ اس اسلام محمدی کا مطالعہ کیا جائےکہ جو اہلبیت نبی علیھم السلام سے  پہنچا ہےاسی ضمن میں مرجع عالی قدردام ظلہ الوارف نے اہل عقل وخرد کوحقیقت کی تلاش میں تحقیق وکھوج بین کرنے کی دعوت  دی۔



ٹیلیگرام کے نجفی چینل کو جوائن کریں


بھیجیں
پرنٹ لیں
محفوظ کریں